نشہ کیا ہے؟

164

:تحریر :نبیلہ شاہد

نشہ ایک دائمی (زندگی بھر کی) حالت ہے جس میں منفی یا نقصان دہ نتائج کے باوجود کسی چیز کی زبردستی تلاش اور لینا یا کسی سرگرمی کو انجام دینا شامل ہے۔نشے کی  لت انسان کی صحت، تعلقات اور زندگی کے مجموعی معیار کو نمایاں طور پر متاثر کر سکتی ہے۔
۔ کیا نشہ ایک بیماری ہے؟
جی ہاں، نشہ ایک بیماری ہے – یہ ایک دائمی حالت ہے۔ امریکن سوسائٹی آف ایڈکشن میڈیسن (ASAM) نشے کی تعریف دماغ کی دائمی خرابی کے طور پر کرتی ہے۔ نشہ قوت ارادی کی کمی یا غلط فیصلے کرنے کے نتیجے میں نہیں ہوتا۔ انسان  کے دماغ کی کیمسٹری علت کے ساتھ بدل جاتی
ہے
شیشہ ایک خطرناک نشہ ھے
، اس وقت نوجوانوں میں مقبول ترین شے ہے جس کو وہ تفریح کے ہر موقع پر پیتے اور اس سے لطف اندوز ہوتے ہیں ،یہ تمباکو ،شیرہ اور شہد کو ملا کر تیار کیا جاتا ہے ،اب یہ مختلف فلیورزمیں بھی دستیاب ہیں،اور یہ حقے میں پیا جاتا ہے۔اس میں استعمال ہونے والا تمباکو سگار اور سگریٹ سے مختلف ہوتا ہے جس میں انڈسٹریل کیمیکل اور مصنوعی اجزاء شامل کئے جاتے ہیں ۔شیشہ قدرتی اشیاء سے ملا کر بنتا ہے اور مختلف ذائقوں میں ہر جگہ دستیاب ہے۔بعض اوقات ہم اپنی سوچوں کو منفی رخ پر جانے سے نہیں روک پاتے ۔ اگر آپ یہ چاہیں کہ آپ شیشہ پینا چھوڑ دیں اور اس کا استعمال آپ خاصے عرصے سے کر رہے ہوں تو یہ بہت مشکل ہوتا ہے ۔لیکن اگر آپ اس پر جمے رہیں تو بہت ممکن ہے کہ آپ اس پر قابو پا لیں ۔
صحت پر شیشے کے نقصانات اور اثرات:
ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے مطابق جب تمباکو نوشی ایسے پانی کے پائپ کے ذریعے کی جاتی ہے تو اس میں زہریلے اجزاء شامل ہو جاتے ہیں جس کی وجہ سے پھیپھڑوں کا کینسر ،دل کی بیماریاں ،اور دوسری بیماریاں پیدا ہو جاتی ہیں ،اور یہ بات سچ ہے کہ پانی نکوٹین کو جذب کر لیتا ہے ،اور شیشہ پینے والے نکوٹین کی مقدا رکا عادی ہو جاتا ہے ۔ریسرچ سے یہ بات بھی ثابت ہو جاتی ہے کہ ایک بار شیشہ پینے کا مطلب ہے کہ آپ نے ایک پیکٹ سگریٹ کا پیا ہے جس کا مطلب یہ ہوا کہ جس طرح سگریٹ پینے والے کو صحت سے متعلق رسک رہتا ہے بالکل اسی طرح شیشہ پینے والے کو بھی ایسا ہی رسک رہتا ہے ۔جو لوگ شیشہ پیتے ہیں یا ہربل تمباکو کا استعمال کرتے ہیں ان میں کاربن مونو آکسائیڈ کی مقدار بڑھ جاتی ہے ۔سگریٹ کے ساتھ اگر ہائی لیول کی کاربن مونو آکسائیڈ،ٹار اور بھاری میٹلز خطرناک اور جسم میں کینسر کا سبب بن جاتے ہیں ۔اسی لئے نہ صرف سگریٹ اسموکر بلکہ شیشہ پینے والے بھی کینسر کے مرض میں مبتلا ہو جاتے ہیں جس میں ،منہ،ہونٹ،زبان،حلق،اور پھیپھڑوں کا کینسر شامل ہیں ۔اس کے ساتھ دل کی بیماریاں بھی اس میں شامل ہیں ۔
اپنے آپ کو اس عادت سے چھٹکارہ دلانے کی کوشش کریں :
کسی بھی عادت سے چھٹکارہ پانا خاصا مشکل کام ہے اور اس کو مستقل چھوڑنے کا اگر آپ سوچ لیں تو یہ اور بھی دقت طلب ہے۔بعض دفعہ ہم اپنے آپ کو منفی انداز میں سوچنے سے روک نہیں پاتے کہ یہ ایک ناممکن کام ہے کہ ہم اپنی اس عادت پر قابو پالیں خاص کر اس وقت جب کہ ہم اس عادت میں بہت عرصے سے مبتلا ہوں ۔لیکن تھوڑی سی مستقل مزاجی اور ہمت افزائی اس لت سے چھٹکارہ دلا دیتی ہے،بس اس کے لئے خود کو حوصلہ دینا ہوتا ہے کہ ہم یہ کام کر سکتے ہیں ۔اگر آپ اچھی صحت مند زندگی گزارنا اور جینا چاہتے ہیں تو اس کے لئے آپ کو یہ فیصلہ کرنا ہوگا اپنے لئے اور ان لوگوں کے لئے جو آپ سے محبت کرتے ہیں،اور اپنی زندگی کا کوئی مقصد متعین کرنا ہوگا ۔اس عادت کو چھوڑنے کے بعد بھی آپ کو اکثر پریشانی اور ٹینشن میں ایسا لگے گا کہ آپ دوبارہ اس شیشہ نوشی کو شروع کر دیں ،اور بہت سے لوگ اس میں دوبارہ مبتلا ہو بھی جاتے ہیں ،اسی لئے اس خوف سے بچنے کے لئے ضروری ہے کہ ایکسر سائز کو اپنے معمولات میں شامل کر لیں ،یہ نہ صر ف آپ کی صحت اور زندگی کے لئے بہتر ہے بلکہ اس سے آپ کوزندگی کے مختلف دباؤ اور پریشانیوں کو جھیلنے کا حوصلہ بھی ملے گا۔اپنے دوستوں اور خاندان کی مدد سے اور ان کی حوصلہ افزائی سے آپ کو شیشہ چھوڑنے میں آسانی ہو جائے گی۔آپ اپنی فیملی کو بتا سکتے ہیں کہ آپ کو کس قسم کی مدد درکار ہے،اگر آپ کو ان کی مدد نہیں چاہیے تو بھی ان کو بتائیں کہ شیشہ چھوڑنے کے لئے آپ کو مدد نہیں بلکہ وقت درکار ہے تاکہ پوری دلجمعی سے اس لت کو ختم کر سکیں ۔
شیشہ چھوڑنے کے لئے مددگار طریقے:
کچھ لوگوں کو اس لت کے خاتمے کے لئے علاج کی ضرورت پڑتی ہے اور یہ عام طور پر خاصا کارآمد طریقہ ہے ،یہ بہت مشکل کام ہے کہ آپ اپنے فزیشن سے علاج کے مختلف طریقوں پر بات کریں ،کیونکہ تمام علاج یکساں نہیں ہوتے ،یہ آپ کا فزیشن ہی بہتر بتا سکتا ہے کہ آپ کے لئے زیادہ بہتر طریقہ علاج کونسا ہے اور کس طریقہ علاج سے آپ اس لعنت سے چھٹکارہ حاصل کر سکتے ہیں اور آپ کو اس میں مدد مل سکتی ہے۔اگر آپ لوگوں سے ملنا ملانا پسندکرتے ہیں تو اس سے بھی اس کام میں مدد ملے گی کیونکہ افراد سے تعلق میں علاج آسان ہو جاتا ہے اوران سے حوصلہ افزائی بھی ملتی ہے لیکن اس کے لئے کسی ماہر تھراپسٹ کی مدد لینی چاہیے تاکہ اس سے مختلف ایشوز پر بات کی جا سکے اور اس کے مراحل کو آسان کیا جاسکے ،اس عادت کو چھوڑنے میں بھی کچھ مشکل مراحل سامنے آتے ہیں جو بعض اوقات آپ کو بہت توڑ دیتے ہیں لیکن اگر آپ کا معالج اچھا ہو تو یہ سب کچھ آسان ہوجاتا ہے ۔اس کے علاوہ ایک طریقہ علاج تحریک پیدا کرنے والے انٹرویو کا بھی ہے،یہ ایک طرح کی کونسلنگ ہے جس سے آپ کے مزاج کے بدلاؤ کو سنبھالنے میں مدد ملتی ہے ۔اس طریقہ کار میں مریض کے جارحانہ ردعمل کو سنبھالنے کا بھی موقع ملتا ہے ۔یہ آپ کو آپ کا طرزِعمل بدلنے اور اپنے اوپر اعتماد کو بھی بحال کرتا ہے۔
اپنے طرزِعمل کو مثبت رکھیں:
کسی بھی مددگار گروپ کو جوائن کرنے کا ایک فائدہ یہ بھی ہو جاتا ہے کہ اس سے آپ کو موقع ملتا ہے کہ آپ دوسرے لوگوں سے ملیں اور ان سے بات چیت کر کے اپنی دلچسپیوں پر نظرِثانی کریں اپنے اندر مثبت تبدیلی لائیں،اپنی فیملی ،اپنے خاندان سے ہٹ کر یہ لوگ آپ کی کافی چیزوں میں مدد کر سکتے ہیں اور آپ کو نئے نئے خیالات سے مستفید ہونے کا موقع مل سکتا ہے۔ان سب چیزوں کے علاوہ آپ دوسروں کی کمپنی میں خاصا اچھا بھی محسوس کرتے ہیں اور آپ کو بہتری بھی محسوس ہوتی ہے۔اس سے آپ کو دباؤ سے ہٹ کر ایک سکون کا احساس ہوتا ہے۔یاد رکھیں اگر آپ دباؤ میں ہوں گے تو آپ یہ چیز آپ کو دوبارہ شیشہ پینے کی طرف راغب کر سکتی ہے۔اس لت سے چھٹکارہ پانے کے لئے آپ نماز،علاج ،مساج،ایکسرسائز،اور یوگا وغیرہ یا ایسی ہی دوسری سرگرمیاں جن سے آپ کے خیالات کو مثبت سوچ ملے۔ہمیشہ اپنے آپ کو ایکٹو اورچاق و چوبند رکھیں ،صحت مند خوراک کھائیں اس سے آپ میں اسٹیمنا پیدا ہوگا اور آپ میں توانائی کی تیزی سے بحالی ہوگی۔اس دوران میں کوئی وقت ایسا بھی ہوگا جب آپ اپنے آپ کو بے یارومددگا ر سمجھیں گے لیکن اس کے لئے آپ کو اپنے تاثرات اور اپنے احساسات کو اپنے فزیشن سے اپنے دوستوں سے اپنی فیملی سے شئیر
کریں تاکہ وہ آپ کی مدد کر سکیں
سگریٹ اور دیگر تمباکو کی مصنوعات
آپ شاید ان کو منشیات کے طور پر نہ سوچیں۔  لیکن تمباکو میں نیکوٹین نامی ایک کیمیکل ہوتا ہے جو آپ کو خوشی اور توانائی فراہم کرتا ہے۔  اس کا اثر تیزی سے ختم ہو سکتا ہے اور آپ کو مزید کی خواہش چھوڑ سکتا ہے۔  آپ دوسرے منشیات کی طرح سگریٹ میں نیکوٹین کا غلط استعمال اور عادی ہو سکتے ہیں۔
ادویات  کی زیادتی ایسی چیز نہیں ہے جسے آپ ہلکے سے لیں۔  یہ تب ہوتا ہے جب آپ الکحل، نسخے کی دوائی، اور دیگر ادویات کو بہت زیادہ یا غلط طریقے سے استعمال کرتے ہیں۔
نشے کی زیادتی نشے سے مختلف ہے۔  بہت سے لوگ جن کو نشہ آور اشیا کے مسائل ہیں وہ چھوڑ سکتے ہیں یا اپنے غیر صحت مند رویے کو تبدیل کر سکتے ہیں۔  دوسری طرف نشہ ایک بیماری ہے۔  اس کا مطلب ہے کہ جب آپ کی حالت آپ کو نقصان پہنچاتی ہے تب بھی آپ استعمال کرنا بند نہیں کر سکتے۔
عام طور پر استعمال کی جانے والی دوائیں
قانونی اور غیر قانونی دونوں دواؤں میں کیمیکل ہوتے ہیں جو آپ کے جسم اور دماغ کے کام کرنے کے طریقے کو تبدیل کر سکتے ہیں۔  وہ آپ کو ایک خوشگوار “وقتی سکون” دے سکتے ہیں، آپ کے تناؤ کو کم کرسکتے ہیں، یا آپ کی زندگی میں مسائل سے بچنے میں مدد کرسکتے ہیں۔
شراب
شراب ہر ایک کو مختلف طریقے سے متاثر کرتی ہے۔  لیکن اگر آپ بہت زیادہ اور کثرت سے پیتے ہیں، تو آپ کے زخمی ہونے یا حادثے کا امکان بڑھ جاتا ہے۔  زیادہ شراب نوشی جگر اور دیگر صحت کے مسائل کا باعث بھی بن سکتی ہے یا الکحل کی سنگین خرابی کا باعث بن سکتی ہے۔
:
نسخہ اور اوور دی کاؤنٹر (OTC) دوا
یہ غیر قانونی منشیات کی طرح خطرناک اور لت لگ سکتی ہیں۔  آپ دوا کا غلط استعمال کر سکتے ہیں اگر آپ:
کسی اور کے لیے تجویز کردہ دوا لیں۔
اضافی خوراکیں لیں یا اس کے علاوہ کوئی دوا استعمال کریں جس طرح اسے لیا جانا ہے۔
غیر طبی وجہ سے دوائی لیں۔
نسخے کی دوائیوں کی وہ اقسام جن کا اکثر استعمال کیا جاتا ہے ان میں شامل ہیں:
اوپیئڈ درد کم کرنے والے
توجہ کی کمی ہائپریکٹیوٹی ڈس آرڈر
(hyperactivity  disorder  )کے علاج کے لیے استعمال ہونے والی محرک ادویات
بے چینی اور نیند کی ادویات
عام طور پر استعمال کی جانے والی او ٹی سی دوائیں کھانسی اور سردی کی دوائیں ہیں جن میں ڈیکسٹرومتھورفن ہوتا ہے، جو زیادہ مقدار میں آپ کو نشے یا نشے میں دھت محسوس کر سکتا ہے۔
ہیروئن
یہ غیر قانونی منشیات انسانی ساختہ نسخہ اوپیئڈ منشیات کا قدرتی ورژن ہے۔  ہیروئن پہلے آپ کو بہت اچھے جذبات دیتی ہے۔  لیکن جب یہ ختم ہوجاتا ہے، تو سب کچھ سست ہوجاتا ہے۔  آپ آہستہ آہستہ حرکت کریں گے اور سوچیں گے، اور آپ کو سردی لگ سکتی ہے، متلی اور گھبراہٹ ہو سکتی ہے۔  آپ کو بہتر محسوس کرنے کے لیے مزید ہیروئن لینے کی شدید ضرورت محسوس ہو سکتی ہے۔
کوکین
یہ دوا آپ کے پورے جسم کو تیز کرتی ہے۔  جب آپ کوکین استعمال کرتے ہیں، تو آپ بہت تیزی سے بات کر سکتے ہیں، حرکت کر سکتے ہیں یا سوچ سکتے ہیں۔  آپ خوش اور توانائی سے بھرپور محسوس کر سکتے ہیں۔  لیکن پھر آپ کا موڈ غصے میں بدل سکتا ہے۔   یہ آپ کو ایسی چیزیں کرنے کا سبب بن سکتا ہے جو معنی میں نہیں ہیں۔
لمبے عرصے تک کوکین کا استعمال منشیات کی شدید خواہش کا باعث بنے گا۔
چرس
ریاستوں کی بڑھتی ہوئی تعداد نے چرس کے طبی استعمال کو قانونی حیثیت دے دی ہے۔  مٹھی بھر ریاستیں تفریحی چرس لینےکی بھی اجازت دیتی ہیں۔  لیکن زیادہ تر ریاستوں میں، یہ اب بھی غیر قانونی ہے۔
زندگی کی مہارتیں کیا ہیں؟
what is life skills
زندگی کی مہارتیں نشے کے علاج کے بعد تیار کرنے کے لیے ناقابل یقین حد تک اہم ہیں۔ یہ مہارتیں نہ صرف افراد کو روزمرہ کی زندگی میں کامیاب ہونے میں مدد دیتی ہیں بلکہ یہ ایک آزاد زندگی گزارنے کے لیے ضروری ہیں۔ ۔ یہ مہارتیں روزمرہ کی زندگی میں تقریباً ہر کام کو انجام دینے کے لیے اہم ہیں۔ وہ جوتے کے تسمے کو باندھنے کا طریقہ سیکھنے کے طور پر اتنا ہی غیر معمولی ہو سکتا ہے جتنا کہ مناسب مواصلت)(communications ) اور باہمی مہارت کے ساتھ ضروری ہے۔ عام طور پر، زندگی کی مہارتیں چھ اہم شعبوں میں بیان کی جاتی ہیں۔ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے مطابق، یہ شعبے ایسے ہیں جیسے ہنر میں شامل ہیں:
مواصلات اور باہمی مہارت
تخلیقی اور تنقیدی سوچ
مسئلہ کو حل کرنے ا
ور مؤثر فیصلہ سازی
خود آگاہی اصرار اور
خود پر قابو
لچک اور مقابلہ کرنے کی صلاحیت
اگرچہ یہ فہرست مہارتوں کی مکمل فہرست نہیں ہے، لیکن یہ تمام خصلتیں آزادانہ طور پر زندگی گزارنے اور صحت یابی کے دوران کامیاب ہونے کے لیے اہم ہیں۔ Relaps
دوبارہ لگنے سے بچنے کے لیے، ان تمام مہارتوں کو مدنظر رکھنا اور اپنی طاقتوں اور چیلنجوں پر غور کرنا ضروری ہے۔ کسی بھی مسلے کے حل کے لیےاور  زندگی کی مہارتوں کی نشاندہی کرنے کے لیے دماغی صحت کے
پیشہ ورسایکلوجسٹ  سے بات کرنا بھی مددگار ثابت ہو سکتا ہے۔
چھوڑنا اتنا مشکل کیوں ہے؟
نشے کی لت آپ کے دماغ کے
The frontal cortex
کو متاثر کرتی ہے اور آپ کےدماغ کے تسلسل کا کنٹرول اور فیصلے کو بدل دیتی ہے۔  دماغ کے انعام کے نظام کو بھی تبدیل کر دیا گیا ہے تاکہ پچھلے انعامات کی یادداشت منفی نتائج کے باوجود منشیات یا فائدہ مند تجربات کے لیے خواہش یا “بھوک” کو بڑھا سکتی ہے۔
آپ کے دماغ میں یہ تبدیلیاں نشہ چھوڑنا مشکل بنا سکتی ہیں، لیکن یہ یاد رکھنا ضروری ہے کہ عادتیں قابل علاج ہیں۔  صحیح منصوبہ بندی اور وسائل سے بحالی ممکن ہے۔
اچھی خبر یہ ہے کہ آپ چھوڑ سکتے ہیں، حالانکہ یہ ایک پیچیدہ عمل ہے۔  بہت سے عوامل ہیں—جسمانی، ذہنی، جذباتی، اور حیاتیاتی—جو چھوڑنا مشکل بنا دیتے ہیں۔ دوسرے  یہ پیچیدگی یہی وجہ ہے کہ بہت سے لوگوں کو علاج چھوڑنے کے عمل میں رہنمائی کرنے میں مدد ملتی ہے۔  یہاں تک کہ اب بھی، بہت سے لوگ اپنی عادت  کو چھوڑنے میں کامیاب ہو تے ھیں
جب آپ کسی شے یا رویے کے عادی ہو جاتے ہیں، تو آپ کے رکنے پر آپ کو واپسی کی علامات کا سامنا ہو سکتا ہے۔  جب آپ نشے کا استعمال شروع کرتے ہیں یا دوبارہ ایسا سلوک کرتے ہیں تو یہ علامات عارضی طور پر دور ہوجاتی ہیں۔  لیکن وہ وقت کے ساتھ اور اکثر مستقل طور پر آپ کے  نشہ چھوڑنے کے بعد ختم ھو جاتی ہیں۔
جسمانی علامات
جب آپ  نشے سے دستبردار ہوتے ہیں تو کچھ ناخوشگوار جسمانی  علامات کا تجربہ کرنا عام ہے۔  یہ علامات چھوڑنا زیادہ مشکل بنا سکتی ہیں۔  جسمانی دستبرداری کے ساتھ آپ کا تجربہ آپ کی لت کی نوعیت پر منحصر ہوگا، لیکن یہ علامات میں شامل ہو سکتے ہیں:

  • بھوک میں تبدیلی
  • بیمار محسوس کرنا
  • پٹھوں میں درد
    متلی
    ا
  • پیٹ خراب
    الکحل اور منشیات سے جسمانی علاماتجو نشہ چھوڑنے کی وجہ سے پیدا ھوتی ھیں  اکثر کئی دنوں کی مدت میں حل ہوجاتی ہے۔  تاہم، یہ عمل کافی ناخوشگوار ہوتا ہے، اور یہ خطرناک بھی ہو سکتا ہے۔  اگر آپ چھوڑنے کا فیصلہ کرتے ہیں، تو صحت کی دیکھ بھال فراہم کرنے والے سے تعاون حاصل کرنا بہتر ہے۔  ایسی دوائیں بھی ہیں جو جسمانی دستبرداری کے تجربے میں مدد کر سکتی ہیں۔
    ۔
    نفسیاتی علامات
    جب اپ نشہ چھوڑنے کا فیصلہ  کر لیتے ھیں تو   ناخوشگوار جسمانی علامات کے علاوہ، آپ کو نفسیاتی علامات کا بھی سامنا ہو سکتا ہے۔  جو درج ذیل ھیں
  • اضطراب
  • ذہنی دباؤ
  • چڑچڑاپن
  • مزاج میں تبدیلی
  • نیند کی مشکلات
    جس طرح آپ کو اپنے ڈاکٹر کے ساتھ کسی بھی جسمانی  علامات پر بات کرنی چاہیے، اسی طرح ذہنی اور جذباتی علامات پر بھی بات کرنا یقینی بنائیں۔
    ۔  نیشنل انسٹی ٹیوٹ آن ڈرگ ابیوز (NIDA) تجویز کرتا ہے کہ اگرچہ جسمانی علامات اکثر صرف ایک ہفتے تک رہتی ہیں، لیکن نشہ چھوڑنے  کی نفسیاتی علامات زیادہ دیر تک چل سکتی ہیں۔
    چھوڑتے وقت چیلنجز
    ۔  چھوڑنے کا عہد کرنے اور واپسی کے مرحلے سے گزرنے کے بعد بھی، یہ تنازعات دور نہیں ہوتے۔
    نشے میں مبتلا لوگوں کے لیے تناؤ سے نمٹنے کے لیے اپنی لت پر انحصار کرنا عام بات ہے۔  جب آپ چھوڑ دیتے ہیں، تو آپ اس کا مقابلہ کرنے کا طریقہ کار کھو دیتے ہیں۔  یہی وجہ ہے کہ مقابلہ کرنے کے دوسرے طریقوں کو مضبوطی سے قائم کرنا بہت ضروری ہے، مثالی طور پر چھوڑنے سے پہلے۔
    ایک معالج ان روزانہ چیلنجوں میں آپ کی مدد کر سکتا ہے۔  مقابلہ کرنے کی صحت مند حکمت عملیوں کے بغیر، آپ کو “ایک بار پھر” نشہ دوبارہ کرنا  لت والے رویے پر واپس جانے کی شدید خواہش کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔
    ریلیشن شپ سپورٹ آپ کو آرام اور فرار کے لیے اپنے لت والے رویے کا استعمال کیے بغیر تنازعات سے نمٹنے اور ان سے بچنے میں مدد کر سکتی ہے۔
       کچھ معاملات میں، احساس جرم مناسب ہوتا ہے۔  ں.
    جرم اور جواز
    جب آپ کا رویہ صحیح اور غلط کے آپ کے اپنے معیار کے مطابق نہیں ہوتا ہے تو آپ کو جو تکلیف ہوتی ہے وہ تبدیلیاں کرنے کے لیے ایک مضبوط محرک ہوسکتی ہے۔  بعض اوقات، اگرچہ، یہ احساسات آپ کے خلاف کام کر سکتے ہیں، جس کی وجہ سے آپ اپنے اور دوسرے لوگوں کے لیے اپنے رویے کا جواز پیش کر سکتے ہیں۔  یہ عمل چھوڑنے کے فیصلے کی راہ میں رکاوٹ بن سکتا ہے۔
    فرد نشہ کرنے کے بہانے تلاش کرنے لگتا ھے
    کچھ عام جواز یہ ہیں:
  • انکار: “یہ کوئی مسئلہ نہیں ہے۔”
  • مائنسائزیشن: “میں نے پہلے ہی کمی کر دی ہے۔”
  • موازنہ: “آلودگی زیادہ خطرناک ہے،” “میرے دوست مجھ سے کہیں زیادہ پیتے ہیں۔”
  • نافرمانی: “میں چھوڑنے اور دکھی رہنے کے بجائے چھوٹی زندگی گزاروں گا اور خوش رہوں گا۔”
  • عقلیت سازی: “میں نے اپنی عادت کو پورا کرنے کے لیے کبھی چوری نہیں کی،” “جب میں پیتا ہوں تو میں زیادہ ملنسار ہوتا ہوں۔”
  • دو برائیوں سے کم: “اس سے بہتر ہے کہ میں یہ کروں اس سے کہ میرے ساتھ رہنا ناممکن ہو۔”

  • ۔”
    نشے میں مبتلا کسی دوست کی مدد کیسے کی جائے کہ اسے مدد کی ضرورت ہے۔

دوست اور خاندان کے اراکین محسوس کر سکتے ہیں کہ وہ کسی عزیز کے نشے کے استعمال کے بارے میں مسلسل خدشات کا اظہار کرتے ہیں لیکن کبھی کوئی تبدیلی نہیں دیکھتے۔  آپ ہفتوں یا مہینوں کے لیکچر دینے، دھمکیاں دینے، رویے کو نظر انداز کرنے، تبدیلی کے وعدوں کو قبول کرنے، دوسرا موقع دینے، یا نتائج مسلط کرنے کے بعد اس مقام پر پہنچے ہوں گے۔
ماہرین ایک مستقل، مثبت پیغام کو تیار کرنے اور دہرانے کی تجویز کرتے ہیں: “ہمیں آپ کی فکر ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ آپ مدد حاصل کریں۔”  نشے کے استعمال کو اپنے اور دوسرے لوگوں کے لیے ایک مسئلہ کے طور پر بیان کریں جو اس شخص کا خیال رکھتے ہیں۔  الزام تراشی، بحث اور ملامت سے پرہیز کریں، اور مسئلہ کی تردید، تحریف، اجتناب، عقلیت، اور عقلیت کی توقع رکھیں۔
ہو سکتا ہے کہ کوئی دوست، خاندان کا کوئی دوسرا فرد، ڈاکٹر، پادری، باس، ساتھی کارکن، یا اپنی زندگی میں کوئی اور اہم شخص موثر گفتگو کر سکے۔  یا ہو سکتا ہے کہ نشے کے استعمال کی خرابی کا شکار شخص ان سرگرمیوں کا جواب دے گا جو آپ مل کر کر سکتے ہیں، جیسے بروشر یا ویڈیوز کا جائزہ لینا، کسی پیشہ ور سے ملاقات کرنا، یا سیلف ہیلپ SMART Recovery یا Twelve Step میٹنگ میں جانا۔
کرنا اور نہ کرنا
جب آپ مدد کے محتاج شخص سے بات کرنے کی کوشش کرتے رہتے ہیں، تو براہ کرم یہ اہم تفصیلات یاد رکھیں:
جب آپ میں سے کوئی بھی زیر اثر ہو تو بات کرنے کی کوشش نہ کریں۔
اپنے آپ کو اور اپنے آس پاس کے دوسروں کو جسمانی نقصان سے بچائیں۔
۔
ایسی حدود متعین کریں جو آپ کے گھر، مالیات اور رشتوں کی حفاظت کریں گی اور ان حدود پر قائم رہیں گی۔
۔
منشیات درد کو دور کر سکتی ہیں اور خوشی کے جذبات کا سبب بن سکتی ہیں۔  لیکن وہ خطرناک بھی ہیں۔
زیادہ مقدار میں، منشیات جسم کے ضروری افعال میں خلل ڈال سکتی ہیں، جس کی وجہ سے زیادہ مقدار میں استعمال ہو سکتا ہے۔ ، (زیادہ تر منشیات کی زیادہ مقدار کی وجہ سے)  موٹر گاڑیوں کے حادثات ذیادہ ھوتے ھیں جو کہ  موت کی سب سے بڑی وجہ ہے۔
جہاں تک ہو سکے نشہ سے خود بھی دور رہیں اور اپنے اردگرد نظر رکھیں اور اپنے پیاروں کو  بھی اس بیماری سے نکلنے میں ان کی مدد کریں کیونکہ نشہ صرف ایک انسان ہی کو برباد نہیں کرتا بلکہ نشہ پورے خاندان کی بربادی کا سبب بن جاتا ھے اور سب کی خوشیوں کو نگل جاتا ھے ۔
۔
Clinical psychologist
Nabeela  shahid
Infostepup7@gmail.com
03214935001

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.