خدمت ۔ سخاوت اور حکومت

17

تحریر: منشا قاضی

گوئٹے نے کہا تھا جو شخص کسی نصب العین کو مد نظر رکھ کر کوشش کرتا ہے اس کی محنت بارآور ہوتی ہے ۔ جس شخص کا کوئی مقصد زندگی نہیں اس کا زندہ رہنا فضول ہے ۔ جدید عہد کے معلوماتی اور مواصلاتی ویپنز نے عوام کے شعور کو بیدار کر دیا ہے اور اب وہ نہ تو خواب دیکھتے ہیں اور نہ ہی سبز باغ دیکھتے ہیں ۔ بھلائی اور خیر کے کاموں میں سبقت لے جانے والے کامیاب لوگ ہیں اور انہیں جلیل القدر لوگوں میں عبدالعلیم خان کا شمار ہوتا ہے جن کے بارے میں محسن نقوی نے کہا ہے کہ پاکستان میں لوگوں کے پاس بڑا پیسہ ہے بڑی دولت ہے لیکن وہ عبدالعلیم خان کا دل کہاں سے لائیں اصل بات دل کی ہے اور اہل دل لوگ خدمت پر یقین رکھتے ہیں ضمنی انتخاب میں شعیب صدیقی کی کامیابی یقینی ہے کیونکہ اس کے عقب میں عبدالعلیم خان کا منصوبہ ساز زہن کار فرما ہے ۔ 21 اپریل ضمنی انتخابات میں عوام خدمت کو ملحوظ رکھیں گے ۔ خدمت کرنے والے جیت جائیں گے حکومت کرنے والے شاید ہار جائیں ۔ 149 پی پی پی حلقہ میں عبدالعلیم خان فاؤنڈیشن کی خدمات کا جال بچھا ہوا ہے اور ان کی ڈسپنسریاں جہاں دونوں اوقات میں ایم بی بی ایس ڈاکٹر بیٹھتے ہیں اور ادویات مفت تقسیم کرتے ہیں بیواؤں ۔ یتیموں ۔ بیماروں اور جن کا کوئی پرسان حال نہیں ان کو خاموشی سے امدادی چیک دینے کی روائت جاری ہے ۔ شعیب صدیقی عقاب کے نشان کے ساتھ پورا انصاف کرنے والے حلقے میں موجود ہیں ۔ عبدالعلیم خان نے جو خدمت کا معیار قائم کیا اور کردار کی خوشبو تو چار وانگ عالم میں پھیل گئی ہے اس خوشبو کے سفر کو روکا نہیں جا سکتا ۔عبدالعلیم خان کا مشن خدمت خدمت اور خدمت ہے ۔ 21 اپریل. ضمنی انتخابات اور عقاب شعیب صدیقی کی کامیابی کا فیصلہ ہے ۔ جناب عبدالعلیم خان اپنے حریفوں حلیفوں اور دوسرے انتخابی میدان میں اترنے والوں کے لیے مشکلات پیدا کر دی ہیں ۔ سخی کے دشمن بھی دوست بن جاتے ہیں اور بخیل لوگوں کی اولاد بھی ان کی دشمن ہو جاتی ہے اس لیے یہ کامیابی حلقے کے عوام کی خوشحالی کی نوید ہے ۔ شعیب صدیقی اپنے قائد عبدالعلیم خان کے با اعتماد سماجی سائنسدان ہیں اور وہ خزاں کو بہار میں بدلنے کے لیے کام کام اور کام پر یقین رکھتے ہیں

عبدالعلیم خان کے برادر بجان برابر رہبروں کے رہنما سابق طالب علم رہنما خواجہ جمشید امام اپنے بھائی عبدالعلیم خان کی نیک نامی کے چلتے پھرتے محبت کے سفیر ہیں اپ نے اس حلقے کا دورہ کیا اور وہاں کے حالات کو جس طرح بدلا جا رہا ہے ۔ اس کی تقلید دوسرے امیدوار بھی کریں گے تو وہ کامیاب ہوں گے ۔ شعیب صدیقی کا پس منظر اعلی تعلیمی امتیازات سے متصف ہے اور آپ کی مشاورت خدمت انسانی کا وہ مینار ہے جو ہر سو چاندنی بکھیر رہا ہے ۔ شعیب صدیقی جیسے سپوت کا ثبوت اس کا ہوم ورک بتاتا ہے ۔۔ شعیب صدیقی کا دعوی ہے کہ کہ وہ وہاں لا کے چھوڑیں گے

عبدالعلیم خاں کے اس مثالی حلقے کو دوسرے حلقوں والے عوام قدر و منزلت کی نگاہ سے دیکھتے ہوئے اپنے دل میں یہ آرزو پیدا کر رہے ہیں کہ

اگر ہمارے نصیبوں میں نو بہار نہیں

آؤ چمن پرستو خزاں ہی کو سازگار کریں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.