بونیر: آپریشن کے دوران انتہائی مطلوب دہشتگرد ہلاک، پاک فوج کے 2 جوان شہید

27
بونیر میں آپریشن کے دوران انتہائی مطلوب دہشتگرد ہلاک، پاک فوج کے 2 جوان شہید
خیبر پختونخوا کے ضلع بونیر میں سیکورٹی فورسز نے دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاع پر انٹیلی جنس بیسڈ آپریشن کیا جس کے دوران شدید فائرنگ کے تبادلے میں دہشت گردوں کا سرغنہ سلیم عرف ربانی ہلاک اور 2 دہشت گرد زخمی ہوگئے۔ جبکہ دہشت گردوں کی فائرنگ سے پاک فوج کے 2 جوان شہید ہو گئے۔

انٹر سروسز پبلک ریلیشنز (آئی ایس پی آر) کے مطابق آپریشن دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاع پر کیا گیا، آپریشن کے دوران شدید فائرنگ کا تبادلہ ہوا۔

آئی ایس پی آر نے کہا کہ ہائی ویلیو ٹارگٹ دہشت گردوں کا سرغنہ سلیم عرف ربانی ہلاک جبکہ 2 دہشت گرد زخمی ہو گئے جبکہ دہشت گردوں کی فائرنگ سے لانس نائیک حسیب جاوید اور حوالدار مدثر محمود شہید ہو گئے۔

حوالدار مدثر محمود شہید کا تعلق ضلع راولپنڈی سے ہے،انہوں نے16 سال تک پاکستان آرمی میں ذمہ داریاں سرانجام دیں۔ حوالدار مدثر محمود شہید نے سوگواران میں والدین، اہلیہ اور 2 بیٹے چھوڑے۔

لانس نائیک حسیب جاوید شہید کا تعلق آزاد کشمیر کے ضلع پونچھ سے ہے، انہوں نے 5 سال تک پاکستان آرمی میں ذمہ داریاں سرانجام دیں۔ لانس نائیک حسیب جاوید شہید نے سوگواران میں والدین، اہلیہ اور ایک بیٹی چھوڑی ہے۔

دوسری جانب دہشت گرد سلیم عرف ربانی سیکیورٹی فورسز کےخلاف دہشتگردی کی متعدد کارروائیوں میں ملوث تھا، ہلاک دہشت گرد بھتا خوری اور معصوم شہریوں کی ٹارگٹ کلنگ میں بھی ملوث تھا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق ہلاک دہشت گرد سلیم انتہائی مطلوب تھا، حکومت نے اس کے سر قیمت 50 لاکھ مقرر کر رکھی تھی، علاقے میں کلیئرنس آپریشن جاری ہے۔

انٹر سروسز پبلک ریلیشنز کا کہنا ہے کہ پاکستان کی سیکیورٹی فورسز دہشت گردی کے خاتمے کے لیے پُرعزم ہیں، بہادر جوانوں کی قربانیاں ہمارے عزم کو مزید مضبوط کرتی ہیں۔

تبصرے بند ہیں.