مونال ریسٹورنٹ کی لیز سے متعلق کیس، ریکارڈ پیش نہ کرنے پر چیف جسٹس برہم

7

اسلام آباد (کورٹ رپورٹر)چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے سماعت کے دوران کہا کہ پاکستان واحد ملک ہے جہاں فوج اور سی ڈی اے ڈائریکٹوریٹ آپس میں لڑائی کر رہے ہیں۔

سپریم کورٹ میں مونال ریسٹورنٹ کی لیز سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔ چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی۔

سماعت کے آغاز میں چیف جسٹس نے اٹارنی جنرل کو عدالت کا آخری حکم پڑھ کر سنانے کا کہا جس پر اٹارنی جنرل نے گزشتہ سماعت کا حکم نامہ پڑھ کر سنایا۔ چیف جسٹس نے سوال کیا کہ ملٹری اسٹیٹ ڈائریکٹوریٹ کی طرف سے کون آیا ہے؟ جس پر ملٹری اسٹیٹ آفیسر سپریم کورٹ میں پیش ہوئے۔

چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے استفسار کیا کہ مونال کے ساتھ ملٹری اسٹیٹ ڈائریکٹوریٹ کے معاہدے کا اصل ریکارڈ کہاں ہے؟ سارے لوگ جھوٹ بولنے کیلئے آئے ہیں یا کوئی سچ بھی بولے گا۔

چیف جسٹس نے مزید کہا کہ ریکارڈ پیش کریں ورنہ توہین عدالت کا نوٹس کریں گے۔ پاکستان واحد ملک ہے جہاں فوج اور سی ڈی اے ڈائریکٹوریٹ آپس میں لڑائی کر رہے ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.