برطانیہ نے گھانا کے لوٹے ہوئے نوادرات بطور قرض واپس کر دیے

13
برطانیہ نے افریقی ملک گھانا کے لوٹے ہوئے نوادرات 150 سال بعد بطور قرض اسے واپس کردیے۔

برطانوی نشریاتی ادارے کے مطابق برطانیہ کے عجائب گھروں میں سجے سونے کے زیورات، تلوار اور چاندی کی اشیاء سمیت 32 نوادرات گھانا کو 6 سال کے لیے واپس کیے گئے ہیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ برطانوی عجائب گھر میں 15 اور وکٹوریہ اور البرٹ میوزیم (V&A) میں موجود 17 اشیاء پر مشتمل نوادرات، 19ویں صدی میں انگریزوں اورگھانا عوام کے درمیان جنگ کے دوران آسانتے( موجودہ گھانا) کے بادشاہ کے دربار سے لوٹ لیے گئے تھے۔

گھانا کے حکام برسوں سے برطانوی فوجیوں کے ذریعے لوٹے گئے نوادرات کو واپس حاصل کرنے کی کوشش کر رہے تھے۔

رپورٹ کے مطاق توقع ہے کہ یہ اشیاء جمعہ کو گھانا کے موجودہ بادشاہ تک پہنچ جائیں گی جبکہ یہ نوادرات گھانا کے میوزیم میں اگلے ماہ سے نمائش کے لیے رکھے جائیں گے۔

دوسری جانب نائیجیریا بھی 16 ویں سے 18 ویں صدی کی ہزاروں نوادرات کی واپسی پر بات چیت کر رہا ہے جو قدیمی مغرمی افریقی ملک بینن سے لوٹی گئی تھیں اور فی الحال امریکا اور یورپ کے عجائب گھروں میں موجود ہیں۔

واضح رہے کہ دو سال قبل بینن کو 2 درجن قیمتی نوادرات اور فن پارے واپس ملے تھے جو 1892 میں فرانسیسی فوج نے چوری کیے تھے۔

تبصرے بند ہیں.